Contact Us

پنجاب میں کاشتکاروں اور  شوگر ملوں کے خلاف مڈل مین مافیا  ایک بار  پھر  متحرک ہو گیا

sugarcane-farmer

 احمدپورشرقیہ ( نامہ نگار ) پنجاب میں کاشتکاروں اور  شوگر ملوں کے خلاف مڈل مین  مافیا  ایک بار  پھر  متحرک ہو گیا مڈل مین  کاشتکاروں سے  غیر قانونی  طریقوں سے گنا خرید رہے ہیں  جو کہ حکومتی احکامات کے  سراسر  منافی  ہے مڈل مین حکومتی  اعلانیہ  قیمت سے  کم  قیمت  پر  کاشتکاروں سے  نقد  رقم  کے  عوض  گنا  خرید  رہے  ہیں  جو  کہ  غیر  قانونی  فعل  ہے دوسری  طرف  مڈل  مین  شوگر ملوں  کو  گنا  حکومت کی  مقرر  کردہ  امدادی  قیمت  سے  زائد  قیمت  پر  فروخت  کر  رہے  ہیں  جس  سے  نہ صر ف  حکومتی  رِٹ  متاثر  ہو  رہی  ہے  بلکہ  شوگر ملیں بھی  امدادی  قیمت  سے  زائد  قیمت  ادا  کر  کے  گنا  خریدنے  پر  مجبور  ہیں اس  طرح  مڈل مین  ایک  طرف  کاشتکاروں کا  استحصال  کر  رہے  ہیں اور  دوسری  طرف  شوگر ملوں کو  زائد  قیمت  ادا  کرنے  پر  بھی  مجبور  کر  رہے  ہیں۔ ان  خیالات  کا  اظہار  پاکستان  شوگر  ملز  ایسوسی ایشن  کے ترجمان نے ایسوسی ایشن  کی  جانب  سے  جاری  کردہ  ایک  بیان  میں کیا ترجمان کی جانب سے جاری پریس ریلیز میں یہ واضح کیا  کہ ایک کلو  چینی  کی  قیمت  میں  تقریباَََ  80  فیصد  قیمت چینی کی پیداواری قیمت کا ہے اسی  لیے  گنے  کی  قیمت  بڑھنے  سے  چینی  کی پیداواری  لاگت  میں  براہِ راست  اضافہ  ہوتا  ہے شوگر ملیں  اپنا  نقصان  کر کے عوام  کیلئے  ملیں  چلانے  پر  مجبور  ہیں ایسی  صورتحال  کو  دیر  تک  قائم  رکھنا  مشکل  ہو گا اور  شوگر ملیں  جب  نقصان  میں  ہوں  گی  تو  انھیں  سوچنا  ہو گا  کہ  کب  تک  اس  طرح  سے  چل  سکتی  ہیں

پاکستان  شوگر  ملز  ایسوسی ایشن حکومت  سے  مطالبہ  کرتی  ہے  کہ  مڈل  مین  مافیا  کے  خلاف  سخت  کاروائی  عمل  میں  لائی  جائے  بصورتِ دیگر  چینی  کے  ایکس  مل  ریٹ  جو  کہ اس  وقت  سال  کی  کم  ترین  سطح  پر  ہیں،  بڑھنے  کا  خدشہ ہے  اسی صورتحال کا سامنا عوام،  کاشتکار،  شوگرملز  اور حکومت  پچھلے  سال  بھی  کر  چکے  ہیں ان حالات  میں  مڈل مین  کو  روکنا  اشد  ضروری ہے۔

مزید پڑھیں